اسلام آباد ہائی کورٹ:اگر ساجد گوندل پیر تک بازیاب نہ ہوئے تو سیکرٹری داخلہ خود عدالت آ جائیں

اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایس ای سی پی کے لاپتہ افسر ساجد گوندل کو پیر تک بازیاب کرنے کا حکم دے دیا۔

ہائیکورٹ ایس ای سی پی کے لاپتہ افسر محمد ساجد گوندل کی بازیابی کے لئے دائر درخواست پر سماعت کی۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ کے سامنے ساجد گوندل کی والدہ اور اہلیہ عدالت میں پیش ہوئیں۔

عدالت کو ساجد گوندل کی والدہ نے بتایا کہ میرے بیٹے کی کسی سے کوئی دشمنی نہیں تھی، پارک روڑ سے بیٹے کو اغوا کیا گیا، اغوا کار گاڑی وہیں چھوڑ گئے۔ 

جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اسلام آباد سے شہری کو اس طرح اغوا کیا جانا انتہائی تشویشناک ہے۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے معاملہ وفاقی کابینہ کے سامنے بھی رکھتے ہوئے کہا کہ اگر ساجد گوندل بازیاب نہ ہوں تو کابینہ کی آئندہ میٹنگ میں معاملہ رکھا جائے۔

عدالت کا کہنا ہے کہ پیر کے دن دو بجے تک ساجد گوندل بازیاب نہ ہوئے تو سیکرٹری داخلہ خود پیش ہوں۔ عدالت کا مزید کہنا تھا کہ چیف کمشنر بھی عدم بازیابی کی صورت میں عدالت پیش ہوں گے۔

عدالت نے مزید کہا کہ آج کے عدالتی حکم نامے کی کاپی سیکرٹری کابینہ ڈویژن کو بھیجنے کو بھی بھیجی جائے۔

یاد رہے چند روز پہلے ایس ای سی پی کے جوائنٹ ڈائریکٹر اور ڈان نیوز کے سابق رپورٹر ساجد گوندل کو اسلام آباد سے نامعلوم افراد نے مبینہ طور پر پر اغواء کر لیا تھا ج سکی ابتدائی رپورٹ تھانہ چک شہزاد میں درج کروائی گئی تھی۔ 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment