پندرہ ستمبر سے تمام تعلیمی ادارے کھولیں جائیں، جوائنٹ ایکشن کمیٹی

نجی تعلیمی اداروں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی اور مدارس الائنس نے پندرہ ستمبر سے تمام تعلیمی ادارے اور کلاسز کھولنے کا مطالبہ کر دیا۔

نیشنل پریس کلب میں پریس کانفرنس کے دوران فیڈریشن کے صدر کاشف مرزا نے کہا ہے وزراء تعلیم وزراء جہالت ہیں۔ کل کے فیصلے پر آئندہ کا لائحہ عمل دیں گے،اس وقت تک دھرنا دیں گے جب تک مطالبات پورے نہیں ہوتے۔

انہوں نے کہا کہ 84 فیصد والدین ہماری تعلیم بحالی تحریک میں شامل ہیں، حکومت کو خیال نہیں آیا کہ احساس پروگرام میں ہی اساتذہ کی امداد کی جاتی، پانچ سو سے زائد تعلیم سے منسلک افراد کا جنازہ پڑھ چکا ہوں، کتنے اور جنازے چاہیں؟ 

ایسوسی ایشن کے صدر ملک ابرار حسین نے کہا کہ لاکھوں ادارے بند کیے گئے، چار کروڑ بچے متاثر ہوئے۔ حکومت نے بجٹ میں تعلیمی اداروں کے لیے ریلیف نہیں دیا گیا، چالیس ہزار سکولز بند ہو گئے ہیں۔ پلے گروپ سے تمام کلاسز کو پندرہ ستمبر کو بلا کر تعلیمی سلسلہ بحال کریں گے۔

اس موقع پر دیگر قائدین نے بھی حکومت سے مطالبہ کیا کہ تعلیمی سرگرمیاں بحال کرکے کروڑوں بچوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کریں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment