سات ستمبر یوم فضائیہ، فضائی پاسبانوں کو قوم کا سلام

جنگ ستمبر میں ارض وطن پاکستان کے دفاع کو ناقابل تسخیر بنانے والے پاک فضائیہ کے جانبازوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے آج ملک بھر میں یوم فضائیہ منایا جارہا ہے۔

ملک بھر میں یوم فضائیہ کی مناسبت سے مختلف تقاریب کا اہتمام بھی کیا جارہا ہے، جس میں 1965 کی پاک-بھارت جنگ میں ملک کے لیے جان نچھاور کرنے والے شہداء کو سلام پیش کیا جا رہا ہے۔

یاد رہے کہ 1965کی جنگ میں بری اور بحری افواج کے ساتھ ساتھ فضائیہ نے بھی پاک وطن کی جانب میلی آنکھ سے دیکھنے والے دشمن کو منہ توڑ جواب دیا تھا۔

1965 کی جنگ میں پاک فضائیہ کے پائلٹ محمد محمود عالم (ایم ایم عالم) نے ایک منٹ سے بھی کم وقت میں بھارتی فضائیہ کے 5 ایم کے 56 طیاروں کو گرا کر تاریخ رقم کی تھی۔

ایم ایم عالم کی اس بہادری اور جرات پر انہیں حکومت پاکستان کی جانب سے ستارہ جرات سے بھی نوازا گیا تھا۔

ان کے علاوہ اسکواڈرن لیڈر سرفراز احمد رفیقی نے بھی بہادری و حب الوطنی کی عظیم مثال قائم کی۔ یکم ستمبر 1965ءکو چھمب کے مقام پر شاہینوں کا بھارتی وائیو سینا سے پہلا ون ٹو ون مقابلہ ہوا۔ سرفراز رفیقی نے فلائٹ لیفٹیننٹ احمد بھٹی کے ساتھ اپنے ایف 86 طیاروں کے ساتھ4بھارتی ویمپائر طیاروں کو زمین کی دھول چٹائی۔ اس جھڑپ کے بعد ویمپائر طیاروں کو پاکستان کی سرحد کی طرف سر اٹھانے کی جرأت نہ ہوئی۔

اسکواڈرن لیڈر سجاد حیدر کی قیادت میں8 شاہینوں نے بھارتی ہوائی مستقر پٹھان کوٹ پر حملہ کیا اور دشمن کو اس کی ہی کچھار میں نیست و نابود کردیا۔ اس مہم میں شاہینوں نے دشمن کے 12جہاز مکمل تباہ کر دیےاور دیگر بھی کافی نقصان پہنچایا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل گزشتہ روز 6 ستمبر کو ملک بھر میں یوم دفاع و شہدا منایا گیا تھا، جہاں صدر مملکت، وزیراعظم اور آرمی چیف کی جانب سے مادر وطن کے لیے قربانیاں دینے والے شہدا کو خراج عقیدت پیش کیا گیا تھا۔ 

 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment