سینیٹ اجلاس: مشاہد اللہ اور عتیق شیخ کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ

سینیٹ اجلاس کے دوران مشاہد اللہ اور عتیق شیخ کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا، ایک دوسرے کیخلاف غیر پارلیمانی الفاظ استعمال کرتے ہوئے معاملہ گالی گلوچ تک پہنچ گیا۔

چیئرمین صادق سنجرانی کی زیر صدارت سینیٹ اجلاس میں لیگی سینیٹر مشاہد اللہ اور ایم کیو ایم پاکستان کے عتیق شیخ کے درمیان سخت جملوں کا تبادلہ ہوا۔ مشاہد اللہ نے کہا کہ میں کچھ اور بات کر رہا ہوں، سینیٹر عتیق مداخلت کر رہے ہیں۔

عتیق شیخ نے کہا مشاہد اللہ نے مجھے گالیاں دی ہیں، جس پر مشاہد اللہ غصہ ہو گئے اور کہا میں تمہیں بتاؤں گا گالیاں کیا ہوتی ہیں، جاؤ میرے خلاف جا کر ایف آئی آر درج کرا دو۔

بیرسٹر سیف نے ہنگامہ آرائی کو پارلیمنٹرین اور ویان کی توقیر قرار دیتے ہوئے کہا کہ کسی پر سیاسی تنقید کی جائے تو اسے ذاتیات پر نہیں اترنا چاہیے، ہم سب میں برداشت ختم ہو چکی۔

 راجہ ظفر الحق نے ہاؤس رولز کے مطابق نہ چلنے کا موقف اپنایا تو مشیر بابر اعوان نے کہا سینیٹ میں اس ماحول میں بات نہیں ہوسکتی، کسی کی طرف داری نہیں کر رہا لیکن ماحول ساز گار ہونا چاہیئے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment