اپوزیشن جماعتوں کی اے پی سی آج اسلام آباد میں ہو گی

اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس پیپلز پارٹی کی صدارت میں آج ہو گی۔ اسلام آباد میریٹ ہوٹل میں انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی۔ اس کانفرنس کی صدارت بلاول بھٹو زرداری کریں گے۔ 

تفصیلات کے مطابق اے پی سی میں ن لیگ کا وفد بھی شہباز شریف کی قیادت میں شریک ہوں گا، ن لیگ کے وفد میں مریم نواز، احسن اقبال، شاہد خاقان عباسی سمیت دیگر رہنما شریک ہوں گے۔ ذرائع کے مطابق سابق وزیر اعظم نوازشریف بھی وڈیو لنک سے اے پی سی میں شریک ہوں گے۔

کانفرنس میں جمعیت علماء اسلام کا وفد مولانا فضل الرحمن کی قیادت میں شریک ہوں گا، اس وفد میں مولانا عبدالغفور حیدری، اکرم خان درانی اور کامران مرتضی شامل ہوں گے۔ 

اے پی سی میں نیشنل پارٹی بلوچستان کا ڈاکڑ عبدالمالک بلوچ کی قیادت میں اے پی سی میں شریک ہوں گے، میپ کا وفد میں محمود خان اچکزئی کی قیادت میں اے پی سی میں شریک ہو گا۔

عوامی نیشنل پارٹی کا وفد میاں افتخار کی قیادت میں شریک ہو گا جس کی قیادت سردار اختر مینگل کریں گے۔

اے پی سی میں شرکت کے لئیے قومی وطن پارٹی کا وفد آفتاب احمد شیر پائو کی قیادت میں شریک ہوگا۔ 

جماعت اہلحدیث کا وفد سینیٹر ساجد میر کی قیادت میں اور جے یو پی کا وفد شاہ اویس نورانی کی قیادت میں شریک ہو گا جبکہ بی این پی عوامی کا وفد اسرار اللہ زہری کی قیادت میں شریک ہو گا۔

ذرائع کے مطابق اے پی سی میں اہم فیصلے متوقع ہیں اور اے پی سی کا ایجنڈا دو نکاتی ہوگا۔ دو نکاتی ایجنڈے میں حکومت کی دو سالا کارکردگی کا جائزہ لیا جائیگا اور جائزے کے بعد آگے کے حکمت عملی پر مشاورت ہوگی۔ تمام اپوزیشن جماعتیں حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لئے مستقبل کے لائحہ عمل سے متعلق تجاویز دیں گے۔

اے پی سی میں شامل تمام جماعتوں کے قائدین اور شرکاء کے لیے کرسیاں لگا دی گئیں۔ 12 کرسیاں صدارتی کرسی کے ساتھ لگائی گئیں ہیں۔ سامنے والی 13 کرسیوں پر تمام جماعتوں کے سربراہان بیٹھیں گے۔ درمیان والی چار کرسیوں پر بلاول بھٹو زرداری، شہباز شریف، مریم نواز اور مولانا فضل الرحمان بیٹھیں گے۔ اسفند یار ولی، اختر مینگل، محمود اچکزئی، آفتاب شیرپاؤ بھی سامنے والی مرکزی کرسیوں پر تشریف فرما ہونگے۔ 

ذرائع کے مطابق صدارتی کرسیوں کے سامنے دو بڑی اسکرینز نصب کی گئی ہیں۔میاں نواز شریف اور آصف علی زرداری ویڈیو اسکرینز کے ذریعے اے پی سی شرکا سے خطاب کریں گے۔ تقریباً 36 کے قریب مزید کرسیاں بھی دونوں جانب دو دو قطاروں میں لگائی گئیں ہیں۔کچھ کرسیاں ریزرو رکھی گئی ہیں مہمانوں کے اندازے کے مطابق انہیں لگایا جائیگا۔ حال میں تقریباً 80 سے 100 شرکاء کے بیٹھنے کا اہتمام کیا گیا ہے۔  

ذرائع کے مطابق اے پی سی میں میڈیا نمائندوں اور کوریج کے حوالے سے پلان کانفرنس کے آغاز کے وقت بتایا جائیگا۔فی الوقت اے پی سی حال میں جانے پر کسی بھی غیر متعلقہ شخص پر پابندی ہے۔ اے پی سی حال کے اطراف میں بھی سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment