بھارت نے سکھوں کو کوباباگرونانک کی برسی کی تقریبات میں شرکت کرنے سے روک دیا

مودی سرکار اقلیتوں کی مذہبی آزادی چھیننے سے باز نہ آئی۔ تعصب اور جنگی جنون میں مبتلا بھارت نےسکھوں کوباباگرونانک کی برسی کی تقریبات میں شرکت کرنے سےروک دیا۔

سب سے بڑی جمہوریہ کےدعویدار بھارت کےسیکولرزم کابھانڈاپھوٹ گیا ہے۔ سکھ یاتریوں کی باباگورونانک کی برسی پر دنیا بھر سے کرتارپور پر آمد کا سلسلہ جاری ہے لیکن بھارت نےسکھوں کوباباگرونانک کی برسی کی تقریبات میں شرکت سےروک دیا۔

پاکستان نےکورونا سے نمٹنے کیلئے بہترین حکمت عملی اپنائی اورکرتاپور پراحتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے انتظامات کئے اور راہداری کھولنےسےمتعلق بھارت کوآگاہ بھی کیا۔

دفترخارجہ نے سکھوں کے پاکستان آنے سے متعلق دو خط بھی لکھے۔ دفترخارجہ کے مطابق بھارت کو پہلا خط ستائیس جون جبکہ دوسرا ستائیس اگست کو لکھا گیا لیکن ہندتوامیں بھری مودی سرکارنے پاکستان کے دونوں خطوط پر کوئی جواب نہیں دیا۔

بھارت نے تاج محل تو سیاحوں کے لئے کھول دیا لیکن سکھ برادری کو کرتارپور آنے کا موقع فراہم نہ کیا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment