اعلی عدلیہ کو دھمکیاں دینے والے کی معافی کی درخواست مسترد

سپریم کورٹ میں اعلیٰ عدلیہ کے خلاف دھمکی آمیز بیان دینے کا معاملے پر سپریم کورٹ نے آغا افتخار الدین مرزا کی معافی کی درخواست ایک بار پھر مسترد کرتے ہوئے سماعت ایک ماہ کیلئے ملتوی کردی۔

 چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سماعت کی۔ توہین آمیز ویڈیو بنانے والے آغا افتخار کے وکیل نے کہا آغا افتخار کو کورونا ہوگیا ہے اس لئے نہیں آئے۔ آغا افتخار کی بعد میں اوپن ہارٹ سرجری بھی ہونی ہے عدالت سے استدعا ہے ان کو معاف کردیا جائے۔ جس پر عدالت نے استدعا مسترد کر دی۔

چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ اتنے نازک دل والے اتنی بڑی بڑی باتیں کرتے ہیں؟ افتخارالدین پیش ہوں گے تو معاملے کو دیکھیں گے۔

جسٹس اعجازالاحسن نے ریمارکس دیے کیا میڈیکل رپورٹس جمع کرا دی گئی ہیں۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل سہیل محمود نے کہا گواہان کے بیانات کے بارے میں بیان حلفی جمع کرا دیئے ہیں۔

 سپریم کورٹ نے آغا افتخار الدین مرزا کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت ایک ماہ تک ملتوی کردی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment