بھارتی ایجنسی پاکستان میں جاسوسی کے لئے لوگوں کو استعمال کرتی ہے، رامیش کمار

پاکستان ہندو کونسل کے سرپرست اعلی ڈاکٹر رامیش کمار نے انکشاف کیا ہے کہ بھارتی ایجنسی را پاکستان میں جاسوسی کے لئے لوگوں کو استعمال کرتی ہے اگر کوئی انکار کرے تو ان 11 لوگوں کی طرح انہیں وہاں بلا کر قتل کردیا جاتا ہے۔

پاکستان ہندوکونسل کے سرپرست اعلی رامیش کمار نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ مودی سے مخاطب ہوکر کہتا ہوں ہندو مذہب کی روح کے مطابق چلویہ نہیں ہوسکتا کہ پاکستانی ہندوؤں کو جاسوسی کے لئے تیار کرنے کی کوشش کی جائے وہ مان جائیں تو ٹھیک ورنہ قتل کردیا جائے۔

رمیش کمار نے یہ بھی کہا کہ میں نے سابق ججوں سے گیارہ ہندووں کے قتل کو عالمی انسانی حقوق عدالت میں لے جانے کے لئےمشاورت کی ہے ہہ کیس عالمی سطح پر اہم ہوگا ہم سپریم کورٹ میں بھی کیس لیکر جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نریندر مودی سے کہتا ہوں رام کا نام لے کر غلط کام مت کریں۔رمیش کمار کا کہنا تھا کہ بھارت کے شہر جودھ پور میں جو 11 پاکستانی ہندووں کے ساتھ ہوا اس پر سخت غم و غصہ پایا جاتا ہےہم نے بھارتی ہائی کمیشن کو اپنے مطالبات حوالے کئے، پمارا مطالبہ ہے کہ ایف آئی آر کی کاپی، پوسٹمارٹم رپورٹ اور پاکستان ہائی کمیشن دہلی کو ساری معلومات تک رسائی دی جائے 

بھارت میں قتل ہونے والے گیارہ ہندوؤں کی خاندان کی بچ جانے والی واحد خاتون شریمتی مکھی نے کہا کہ مجھے بس انصاف چاہئے، پورے خاندان میں اکیلی بچی ہوں بھارتی حکومت نے ہمارے گیارہ افراد کی میتیں بھی ہمارے رشتہ داروں کو دکھانے نہیں دیں ۔جب تک انصاف نہیں ملے گا یہاں سے نہیں جاؤں گی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment