سنتھیا رچی کیس: پراسیکیوٹر جنرل اسلام آباد اور ایڈوکیٹ جنرل اسلام آباد کو نوٹس جاری

سپریم کورٹ میں امریکی شہری سنتھیا رچی کیس میں رحمان ملک کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے عدالت نے پراسیکیوٹر جنرل اسلام آباد اور ایڈوکیٹ جنرل اسلام آباد کو نوٹس جاری کر دیا۔

جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے امریکی شہری سینتھیا رچی کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف سابق وزیر داخلہ رحمان ملک کی درخواست پر سماعت کی۔

رحمان ملک کے وکیل لطیف کھوسہ نے استدعا کی کہ ہائیکورٹ کی جانب سے معاملے کی تفتیش کے بعد ایف آئی آر درج کرنے یا نہ کرنے کے فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے۔

لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ سنتھیا رچی نے اچانک سابق وزیر اعظم٫ وزیر داخلہ اور وزیر صحت پر دس سال پرانے زمانے کے سنگین الزامات لگائے ہیں، اگر اس طرح محض الزامات پر ایف آئی آر درج کر دی جائے تو کسی کی عزت محفوظ نہیں رہے گی۔

جسٹس قاضی محمد امین نے ریمارکس دیے کہ ایک خاتون کسی پر الزامات لگائے خواہ وہ غلط ہی کیوں نہ ہوں تو اسے کس قانون کے تحت روکا جا سکتا ہے۔ ایف آئی آر کا مطلب کیس کا فیصلہ ہونا نہیں ہوتا۔

لطیف کھوسہ نے کہا کہ جسٹس فار پیس اور مجسٹریٹ نے سنتھیا رچی کی درخواست مسترد کر چکی ہے۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے گزشتہ فیصلوں کو بھی نظر انداز کیا۔

عدالت نے پراسیکیوٹر جنرل اسلام آباد اور ایڈوکیٹ جنرل اسلام آباد کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت بدھ تک ملتوی کر دی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment