ایل او سی پر بھارتی فوج کی فائرنگ،بھارتی ناظم الامور دفتر خارجہ طلب

بھارتی افواج کی طرف سے لائن آف کنٹرول پر ایک مرتبہ پھر بلااشتعال فائرنگ اور سیز فائر کی خلاف ورزی سے ایک پاکستانی شہری شہید جبکہ چار شدید زخمی ہوئے۔ پاکستان کا بھارتی ناظم الامور کو دفتر خارجہ طلب کر کے شدید احتجاج ریکارڈ کرایا گیا ۔

بھارت اپنی حرکتوں سے باز نہ آیا۔ لائن آف کنٹرول پر شہری آبادی کو نشانہ بنانا معمول بن گیا۔ بھارت عالمی و انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مسلسل خطے کے امن کو داو پر لگائے ہوئے ہے۔28 ستمبر کو بھارتی قابض افواج نے ایل او سی کے تندر سیکٹر پر بلا اشتعال فائرنگ کی۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ کے مطابق بھارتی فائرنگ سے پندرہ سالہ شہری ولید شہید جبکہ پچیس سالہ مصباح بیگم پینتالیس سالہ ظہیر عباس اسی سالہ قاسم اور پچیس سالہ سلیمان شدید زخمی ہوئے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ بھارتی ناظم الامور کو بتایا گیا ہے کہ بھارتی رویہ علاقائی امن کیلئے خطرہ اور ناقابلِ قبول ہے بھارت نے رواں سال 2387 مرتبہ سیز فائر کی خلاف ورزی کی جس میں اب تک 19 پاکستانی شہری شہید اور 191۔زخمی ہوئے ہیں۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ بھارت 2003 کے فائر بندی سمجھوتے کی پاسداری کرے اور اقوام متحدہ مبصر مشن کو ایل او سی اور ورکنگ باؤنڈری پر صورتحال کا جائزہ لینے اور کام کرنے کی اجازت دے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment