مال مفت دل بے رحم، وزارتِ خارجہ کی شاہ خرچیاں عروج پر پہنچ گئیں

وزارت خارجہ کے بیرون ممالک مشنز کی شہ خرچیاں عروج پر پہنچ گئیں۔ ماسکو، ایتھنز، سراجیو اور برلن میں 2013 سے 2019 تک1 کروڑ 70 لاکھ اضافی روپے صرف ڈرائیوروں پر خرچ کر دیے۔

دستاویزات کے مطابق 2017 سے 2019 تک ماسکو میں ڈرائیوروں کو 25 ہزار 499 امریکی ڈالرز کی ادائیگیاں کی گئیں۔ ڈرائیورز کو 1 امریکی ڈالر فی گھنٹہ کے معمول کےریٹ کی بجائے 3 ڈالرز فی گھنٹہ کے حساب سے ادائیگیاں کی گئیں۔

دستاویزات کے مطابق یونان میں پاکستانی سفارت خانے نے 2016 سے 2019 تک ڈارئیوروں کو 20 لاکھ روپے کی اضافی ادائیگی کی۔ 2017 سے 2019 تک برلن جرمنی میں پاکستانی سفارتخانہ نے ڈرائیوروں کو 29 ہزار 203 یورو کی اضافی ادائیگیاں کیں۔

دستاویزات کے مطابق بوسنیا میں پاکستانی سفارت خانے نے گاڑی نہ ہونے کے باوجود ڈرائیور کو چار برس میں 79 لاکھ روپے سے زائد ادائیگی کی۔ ان چار برس میں گاڑی کی عدم موجودگی کے باوجود ڈرائیور کو تنخواہ اور اوورٹائم کی مد میں لاکھوں روپے دئیے گئے۔

وزارت خارجہ نے آڈٹ حکام کی جانب سے نشاندہی کے باوجود کوئی جواب نہیں دیا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment