صدر زرداری گرفتاری سے بچ گئے

سابق صدر گرفتاری سے بچ گئے۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے آصف علی زرداری کی عبوری ضمانت میں 5 نومبر تک توسیع کر دی۔

آٹھ ارب کی ٹرانزیکشن کے کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری کی عبوری ضمانت کی درخواست پر سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ میں ہوئی۔ وکیل فاروق ایچ نائیک حاضری سے استثنی کی درخواست پر دلائل دیتے ہوئے کہا کہ آصف علی زرداری بیمار ہیں بیٹھے ہوں تو اٹھا نہیں جاتا، وہ اس وقت ہسپتال میں زیر علاج ہیں، اس لیئے استدعا منظور کی جائے۔

دوران سماعت نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر نے درخواست گزار کی موجودگی ضروری ہونے کا موقف اپنایا۔ جسٹس عامرفاروق نے استفسار کیا کہ کیا ریفرنس دائر ہو چکا یا ابھی انویسٹی گیشن چل رہی ہے۔

نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ اس کیس میں ابھی انویسٹی گیشن چل رہی ہے، جب کیس انکوائری سٹیج پر تھا تو وارنٹ جاری نہیں کیے گئے۔ اب آصف زرداری کے خلاف کافی مواد اکٹھا کیا جا چکا ہے۔

وکیل فاروق ایچ نائیک نے عدالت کو بتایا کہ آصف علی زرداری پہلے ہی ضمانت پر ہیں۔ نیب نے چار ریفرنسز دائر کیے ہیں۔ دو ریفرنسز میں چیف جسٹس نے ضمانت منظور کی ہے۔

جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ درخواست گزار کی کیا صورتحال ہے جس پر فاروق ایچ نائیک نے بتایا کہ آصف زرداری کل تک ہسپتال میں زیرعلاج تھے آج کی اپڈیٹ نہیں۔

عدالت نے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مںظور کرتے ہوئے آصف زرداری کی عبوری ضمانت میں 5 نومبر تک توسیع کرتے ہوئے نیب پراسیکوٹر کو اریسٹ وارنٹ کی کاپی آصف زرداری کے وکیل کو دینے کی ہدایت کی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment