بلوچستان میں ایف سی کی گاڑی پر حملہ، 6 اہلکار شہید

صوبہ بلوچستان کے مکران کوسٹل ہائی وے پر آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ کمپنی لمیٹڈ (اوجی ڈی سی ایل) کے قافلے پر حملے کے نتیجے میں فرنٹیئر کور (ایف سی) کے کم از کم چھ اہلکار شہید ہوگئے ہیں۔

وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے او جی ڈی سی ایل کے قافلے پر حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے بزدلانہ عمل قرار دیا ہے۔

دوسری جانب ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) آفس گوادر کے ایک اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر غیر ملکی خبر رساں ایجنسی بتایا کہ دہشتگردی کے اس واقعے میں 14 اہلکاروں کی شہادت ہوئی ہے۔

مذکورہ اہلکار کے مطابق دہشتگردوں کی جانب سے ایف سی کی گاڑی پر فائرنگ کے نتیجے میں آٹھ اہلکار شہید ہوئے جبکہ ایک گاڑی کے تیل کے ٹینک میں آگ بھڑک اٹھنے سے اس میں سوار چھ اہلکار جھلس گئے۔

 

دہشتگردی کے اس واقعے کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر مزید کارروائی شروع کر دی جبکہ لاشوں کو اورماڑہ میں واقع پاکستان بحریہ کے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

اہلکار نے مزید بتایا کہ قافلے میں چار گاڑیاں شامل تھیں جن میں سے دو مکمل تباہ ہو گئیں۔ 

واضح رہے کہ مکران کوسٹل ہائی پر اکثر اوقات بھارت نواز بلوچ دہشتگرد گروہوں کی طرف سے سیکیورٹی فورسز اور غیر مقامی افراد پر اس طرح کے حملے ہوتے رہتے ہیں۔ اس سے قبل بھی یہاں ایک بس سے غیر مقامی 14 افراد کو اتار کر گولیاں مار قتل کر دیا تھا۔

تاہم اس  دہشتگردانہ  حملے کی ذمہ داری ابھی تک کسی دہشتگرد گروہ کی جانب سے قبول کرنے کی اطلاعات نہیں آئیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment