راولپنڈی میں گھریلو ملازم بچے پر خاتون کا مبینہ تشدد

راولپنڈی کے علاقے گلریز میں کم سن گھریلو ملازم پر مبینہ تشدد کا ایک اور واقعہ پیش آیا ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی مبینہ ویڈیو میں ایک خاتون اپنے ملازم بچے پر تشدد کر رہی ہیں۔ذرائع کے مطابق گھر میں کام کرنے والے کم عمر بچے پر خاتون کی جانب سے روزانہ تشدد کیا جاتا ہے۔

ذرائع کے مطابق گھریلو ملازم بچے پر تشدد کی ویڈیو راوپلنڈی کے علاقے گلریز 3 کی گلی نمبر 5 کی ہے۔

خیال رہے بچوں کی گھریلو ملازمت کو غیر قانونی قرار دینے کے لیے وفاقی کابینہ نے رواں سال آگست کے مہینے میں بچوں کی گھریلو ملازمت کو ممنوع کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اس حوالے سے وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے اپنی ٹوئٹ میں کہا تھا کہ بالآخر وفاقی کابینہ کا فیصلہ گزٹ نوٹیفکیشن کے ذریعے نافذ ہوگیا ہے اور بچوں کی گھریلو ملازمت 1991 کےچلڈرن ایمپلائمنٹ ایکٹ کے تحت ممنوع  ہوگئی ہے۔

 

 

راولپنڈی  کے علاقے  گلریز  میں کم سن گھریلو ملازم  پر مبینہ تشدد کا ایک اور  واقعہ پیش آیا ہے۔
سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی مبینہ ویڈیو میں ایک خاتون اپنے ملازم  بچے پر تشدد کر رہی ہیں۔ذرائع کے مطابق گھر  میں کام کرنے والے کم عمر بچے پر خاتون کی جانب سے  روزانہ  تشدد  کیا جاتا ہے۔
ذرائع کے مطابق گھریلو ملازم بچے پر تشدد کی ویڈیو راوپلنڈی کے علاقے گلریز 3 کی گلی نمبر 5 کی ہے۔
خیال رہے بچوں کی گھریلو ملازمت کو غیر قانونی قرار دینے کے لیے وفاقی کابینہ نے رواں سال آگست کے مہینے میں بچوں کی گھریلو ملازمت کو ممنوع کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اس حوالے سے وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے اپنی ٹوئٹ میں کہا تھا کہ بالآخر وفاقی کابینہ کا فیصلہ گزٹ نوٹیفکیشن کے ذریعے نافذ ہوگیا ہے اور بچوں کی گھریلو ملازمت 1991 کےچلڈرن ایمپلائمنٹ ایکٹ کے تحت ممنوع  ہوگئی ہے۔

 

 

 

 

 

 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment