انسداد دہشت گردی عدالت نے وزیراعظم عمران خان کو پارلیمنٹ حملہ کیس میں بری کردیا

اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی عدالت نے وزیراعظم عمران خان کو پارلیمنٹ حملہ کیس میں بری کردیا۔

کیس کا فیصلہ جج راجا جواد عباس نے سنایا۔ عمران خان کیخلاف سال 2014 دھرنے کے بعد مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے وزیراعظم کی مقدمہ سے بریت کی درخواست پر دلائل سننے کے بعد چند روز قبل فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

وزیراعظم عمران خان کے وکیل نے بریت کی درخواست پر تحریری دلائل جمع کراتے ہوئے مؤقف اختیار کیا تھا کہ عمران خان کو جھوٹے اور بے بنیاد مقدمے میں پھنسایا گیا، ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں، نہ ہی کسی گواہ نے ان کے خلاف بیان دیا۔

واضح رہے کہ اگست سال 2014 میں تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک نے سال 2013 کے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کے خلاف دھرنا دیا تھا جس کے دوران دونوں جماعتوں کے کارکنان نے پولیس رکاوٹیں توڑ کر وزیراعظم ہاؤس میں گھسنے کی کوشش کی۔

اس دوران کارکنوں کی جانب سے پارلیمنٹ ہاؤس کے گیٹ کو بھی نقصان پہنچا تھا۔ مشتعل کارکنان اور پولیس کے درمیان تصادم میں 3 افراد جاں بحق 560 سے زائد زخمی بھی ہوئے تھے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ عمران خان ایس ایس پی تشدد کیس میں پہلے ہی بری ہو چکے ہیں، جب کہ پی ٹی وی حملہ کیس میں بھی عمران خان کی درخواست بریت دائر کی گئی ہے۔

 

 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment