اسلام آباد ہائی کورٹ :جنرل(ر) اسد درانی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر وزارت دفاع کو نوٹس جاری

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر وزارت دفاع کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 10روز میں جواب طلب کر لیا ہے۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے سابق ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر سماعت کی ۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل طارق کھوکھر نے کہا میں ہدایات لے کر آئندہ سماعت پر عدالت کو آگاہ کروں گا۔ جسٹس محسن اختر کیانی نے ریمارکس دیے کہ سزا کے طور پر درخواست گزار کی پنشن اور بینفٹ پہلے ہی ختم کر دئیے گئے۔ یا تو یہ ہو نا کہ ان کو جیل میں رکھنا ہو تو پھر صورت حال مختلف ہے۔ اس کیس میں ایسا بھی نہیں۔

جسٹس محسن اختر کیانی کا مزید کہنا تھا کہ وزارت دفاع اور وزارت داخلہ کیسے کام کر رہے ہیں ؟ اس کیس میں کوئی دلچسپی نہیں لے رہا۔ پہلے یہ تھا انکوائری زیر التوا تھی اب وہ بھی نہیں، جو فیصلہ کیا گیااس میں بھی کچھ نہیں لکھا،وجوہات چھپا کر رکھی ہیں۔ ابھی تک وزارت دفاع نے ای سی ایل پر نام رکھنے کی کوئی وجہ نہیں بتائی۔

عدالت نے جواب جمع کرانے کے لیے آخری موقع دیتے ہوئے سماعت 4دسمبر تک ملتوی کردی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment