سعودی حکومت نے خواتین کو بھی ملکی افواج کا حصہ بنانے کی اجازت دے دی


سعودی فوج میں خواتین کی بھرتی کا آغاز ہوگیا

سعودی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ سعودی افواج میں پہلی بار خواتین کی باقائدہ بھرتی کا آغاز کردیا گیا ہے۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق سعودی وزارت دفاع نے سعودی افواج میں داخلے کیلیے آن لائن درخواست دائر کرسکتی ہیں جس کا آغاز کردیا گیا ہے۔

خواتین سعودی فوج کے مخلتف دھڑوں یعنی ایئر فورس، نیوی، اسٹریٹیجک میزائل فورس اور میڈیکل سروس میں سپاہی سے لے کر سارجنٹ تک کی تعیناتیوں کیلیے درخواستیں دی جاسکتی ہیں۔

سعودی وزارت دفاع کے مطابق درخواست گزاروں کیلیے لازمی قرار دیا گیا ہے کہ وہ میڈیکل فٹ ہوں اور داخلے کی تمام شرائط پر پورا اترتے ہوں لیکن خواتین امیدواران کیلیے چند مزید شرائط بھی لاگو کی گئی ہیں۔

جاری کردہ شرائط کے تحت سرکاری ملازمت کی حامل خاتون درخواست دینے کی اہل نہیں ہوںگی۔ خواتین امیدواروں کے لیے ضروری قرار دیا گیا ہے کہ ان کی عمریں 21 سے 40 سال کے درمیان ہوں۔

خواتین امیدواروں کیلیے قد کی شرط بھی رکھی گئی ہے جو 155 سینٹی میٹر یا اس سے زائد ہونا ضروری ہے۔

سعودی افواج میں ملازمت کی خواہش مند خواتین امیدواروں کیلیے لازمی ہے کہ انہوں نے اسکول کی تعلیم حاصل کی ہو اور کسی غیر ملکی سے شادی نہ کی ہو۔ خواتین امیدواروں کے پاس شناختی کارڈ کا ہونا بھی لازمی قراردیا گیا ہے۔


اپنا تبصرہ بھیجیں