بنگلہ دیش میں کشتی ڈوب گئی، درجنوں افراد لا پتہ


اسلام آباد : بنگلہ دیش میں حکام کا کہنا ہے کہ چار اپریل اتوار کی شام کو دریائے شیتا لکھّیا میں ایک چھوٹی کشتی ایک مال بردار جہاز سے ٹکر لگنے کے بعد ڈوب گئی۔ حادثے کا شکار ہونے والی کشتی میں کم از کم 50 افراد سوار تھے۔ حکام کے مطابق اب تک پانچ لاشیں نکالی جا چکی ہیں جبکہ درجنوں افراد اب بھی لا پتہ ہیں۔

بنگلہ دیش میں ‘واٹر ٹرانسپورٹ اتھارٹی’ سے وابستہ ایک افسر مبارک حسین نے بتایا کہ یہ واقعہ ڈھاکہ کے پاس ہی دریائے شیتا لکھّیا میں اس وقت پیش آیا جب ایک ڈبل ڈیکر کشتی کو مال بردار جہازنے پیچھے سے ٹکر مار دی جس کی وجہ سے کشتی غرقاب گئی۔یہ کشتی ناریان گنج سے پڑوسی ضلع منشی گنج جارہی تھی جسے تقریباً 45 منٹ کا سفر طے کرنا تھا، تاہم روانہ ہوتے ہی مقامی وقت کے مطابق تقریباً چھ بجے شام کو حادثہ پیش آ گیا۔

گم شدہ افراد کی تلاش اور لاشوں کو نکالنے کے لیے غوطہ خوروں کی خدمات کے ساتھ ساتھ دیگر امدادی سرگرمیاں رات میں جاری رہیں۔ تاہم حادثے کے بعد ہی فوری طور پر آنے والے ایک طوفان کے سبب یہ سرگرمیاں بھی بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔

ناریان گنج میں آگ بجھانے والے محکمے سے وابستہ ایک افسر عبداللہ العارفین نے خبر رساں ادارے اے ایف پی سے بات چیت میں کہا کہ اب تک گیارہ افراد کو بچالیا گیا ہے جبکہ ممکن ہے کہ کچھ لوگ تیر کر دریا پار کر گئے ہوں۔بچنے والے افراد کو اسپتال میں بھرتی کرنا پڑا۔

 


Leave A Reply

Your email address will not be published.