گرمیوں کے چند بہترین بزنس۔۔۔

حامد حسن


چھوٹے سرمایہ سے شروع ہونے والے موسم گرما کے کچھ ایسے بزنس جو تھوڑی انویسٹمنٹ سے شروع کئے جاسکتے ہیں اور اچھا منافع کمایا جاسکتا ہے۔

گرمیوں کا سیزن سردیوں کی بہ نسبت زیادہ طویل ہوتا ہےپنجاب وغیرہ میں اپریل سے لے کر اکتوبر تک گرمی رہتی ہے اور پہاڑی علاقوں میں مئی سے ستمبر تک گرمی رہتی ہے پھر خنکی بڑھ جاتی ہے۔گرمیوں میں چونکہ انسان کی سب سے زیادہ طلب ٹھنڈی اشیاء کی رہتی ہے اور ہر کوئی ایسی چیز کی تلاش میں رہتا ہے جس سے گرمی میں کمی کی جائے۔گرمیوں میں کھانے کی اشیاء کی بہ نسبت پینے والی اشیاء کا زیادہ استعمال ہوتا ہے اور گھر سے باہر ہر کسی کو گرمی سے بچاؤ کے لئے پینے کی چیزوں کی زیادہ طلب ہوتی ہے۔

چھوٹی انویسٹمنٹ سے شروع ہونے والے چند کام

1۔گنے کا رس

2۔ملک شیک

3۔ فالسے کا شربت

4۔ دودھ والی بوتل

5۔ فالودہ

6۔ املی آلو بخارے کا شربت

7۔ ٹھنڈا دودھ

8۔ شنکنجین

9۔ اناناس کا جوس

10۔ ربڑی دودھ

11۔ دودھ سوڈا

12۔ سوڈا واٹر

13۔ ستو شربت

14۔ حکیمی شربت

15۔ صندل, شکر, کولا شربت

راولپنڈی کے چند مختلف مقامات پر مختلف ریہڑی والے نوجوانوں سے پوچھ تاچھ کرنے پر جو کچھ معلوم ہوا اس کے مطابق

20,30 ہزار کی انویسٹمنٹ سے کام شروع کیا جاسکتا ہے

ایک بار کی انویسٹمنٹ والی اشیاء

ایک عدد اچھی ریہڑی۔ 10,000

ایک عدد اچھی چھتری۔ 5,000

شربت کا ایک ٹینک۔ 4,000

ایک درجن شیشے والے اچھے گلاس۔ 15,00

دیگر اشیاء۔ 3,000

(یہ رف اسٹمیٹ لگایا گیا ہے علاقہ, کوالٹی, اور چیز نئی پرانی کے حساب سے ریٹ زیادہ کم ہوسکتا ہے)

ہر کام کا الگ سے اسٹیمٹ ہے جس میں راء میٹیرل وغیرہ کا خرچ ہے

ان میں سے گنے کے جوس, ملک شیک کے علاوہ کسی بھی کام کا اسٹیمیٹ لگائیں تو اوسطاً خرچ 1,500 سے 3,000 تک ہے۔

اور منافع اوسطاً 800 سے 1500 تک

مثلاً ٹھنڈے دودھ کا کام جو سب سے بہترین ہے۔

5 کلو دودھ 600 روپے

تخ ملنگا, گوند کتیرا, چینی اور شربت 300 روپے

پکانے وغیرہ کا خرچ تقریبا 100 روپے

یہ کل ملا کے 1,000 روپے بنیں گے

5 کلو دودھ میں اگر پاؤ کا ایک گلاس ہو تو 20 گلاس بنیں گے

ایک گلاس 80 روپے کا ہو تو 16,00 بنیں گے

اگر روز کا 20 کلو دودھ فروخت ہو تو تقریباً 15,00 کی بچت ہوگی۔

اسی طرح ربڑی دودھ/ املی آلو بخارے کا شربت/ 3۔ فالسے کا شربت/ دودھ والی بوتل/ فالودہ/ املی آلو بخارے کا شربت/ ٹھنڈا دودھ/ شنکنجین/ اناناس کا جوس/ ملک شیک/ دودھ سوڈا/ سوڈا واٹر/ ستو شربت/ حکیمی شربت/ صندل, شکر, کولا شربت وغیرہ۔

ان سب چیزوں کا بزنس تھوڑی انویسٹمنٹ سے شروع کیا جاسکتا ہے۔یہ کام پبلک مقامات, بس اڈے, ریلوے سٹیشن, بس سٹاپ, چوک چوراہے, اور بازار میں رش والی جگہوں پر کیا جاسکتا ہے۔اس میں اگر دکان کے لئے الگ سے انویسٹمنٹ ہوتو بہتر ورنہ بغیر کرایہ کے چلتے پھرتے یہ کام کیا جاسکتا ہے جس میں کسی قسم کا کرایہ وغیرہ نہیں ہوتا۔اگر تھوڑی سی محنت شوق اور لگن سے کام کیا جائے تو روز کی بنیاد پر بہترین انکم حاصل کی جاسکتی ہے۔

بیروزگاری اور حالات سے پریشان ہونے کے بجائے اللہ پر توکل کریں۔ کسی سے آسرا اور امید لگانے کے بجائے کسی بھی کام کے لئے ٹھان لیں۔ اپنے لئے پلاننگ کریں اگر زیادہ انویسٹمنٹ نہیں تو تھوڑی انویسٹمنٹ سے ہی کسی کام کی بسم اللہ کرلیں اللہ برکت دے گا ان شاء اللہ العزیز۔محنت کرنے میں کسی قسم کی کوئی عار نہیں۔کوئی کام چھوٹا نہیں ہوتا۔رزق حلال جس کام سے بھی حاصل ہو وہ کام عین عبادت ہے۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.