سوئیٹزرلینڈ : قدیم روایات کے تحت سنو مین کو جلا کر گرمیوں کی آمد کا عندیہ دے دیا گیا

خضر منظور


سوئیٹزرلینڈ میں قدیم روایات کے تحت سنو مین کو جلا کر گرمیوں کی آمد کا عندیہ دے دیا گیا ہے۔

کرونا وائرس کی پابندیوں کے باعث تاریخ میں پہلی بار سنو مین کو پہاڑوں میں آگ لگائی گئی ہے۔ 

اس رسم کے تحت سرد علاقے میں سنو مین کو گھاس پھونس کے بلند و بالا ٹیلے پرسیدھا کھڑا کیا جاتا ہے۔ ہاتھ میں لوہے کا لمبا سا تین شاخہ تھامے یہ سنو مین دور سے دیکھنے پر بالکل انسان کی مانند دکھتا ہے۔بوگ کہلانے والے روائتی ونٹر مین کو زیورخ شہر کے مرکز میں جلایا جاتا تھا مگر اس بار کرونا وائرس کے باعث سنومین کو شہر سے سو کلومیٹر دور پہاڑیوں کے دامن میں جلایا گیا۔

بوگ سردیوں کے شیطانوں کی نمائندگی کرتا ہے اور ہر مرتبہ اس کے ہاتھ میں دلہن کا ہاتھ دیا جاتا ہے لیکن اس مرتبہ بوگ کو خاتون کی جگہ تین شاخہ ملا۔بوگ کو جلانے کے لئے اس کے ساتھ آتشگیر مادہ لپیٹا گیا تھا جس نے بارہ منٹ اور ستاون سیکنڈ میں سرد ہواؤں کے باوجود اس سنومین کا خاتمہ کر دیا۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.