Khabarnamay

امریکی محکمہ دفاع نے جنگی طیارے ایف35 سے نیوکلیئر بم گرانے کی تصویر جاری کر دی

ویب ڈیسک ۔ ایف 35 دنیا کا وہ واحد طیارہ ہے جو نہ صرف ایٹمی میزائل بلکہ دیگر روایتی اسلحہ بھی لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ رپورٹس کے مطابق حال ہی میں امریکی دفاعی حکام کی جانب سے طیارے کو ایٹم بم گرانے کے استعمال کیلئے مزید مضبوط اور کار آمد بنانے کیلئے مزید تجربات کیے گئے ہیں۔

 

امریکا کے محکمہ دفاع کی جانب سے جدید ترین ایف 35 اے جنگی طیارے سے ایٹم بم فرضی طور پر گرانے کی تصاویر جاری کردی گئی ہیں۔ ایف 35 اے لائٹننگ ٹو اسٹیلتھ طیارے نے مشق کے دوران تھرمو نیو کلیئر گریویٹی بم گرایا۔ یہ پرواز کیلی فورنیا کے امریکی ایئر فورس کے بیس ایڈورڈز ایئرفورس بیس کے اوپر سے کی گئی۔ اس 50کلو ٹن وزنی بم کو طیارے کے اندرونی حصے میں بھی رکھا جاسکتا ہے تاکہ اس کی اسٹیلتھ صلاحیت بھی پوری طرح برقرار رہے۔ اگلے مرحلے میں یہ مختلف وزن کے ایٹم بم گرانے کا تجربہ کرے گا۔

 

طیارے کی صلاحتیوں سے متعلق امریکی دفاعی حکام کا کہنا ہے کہ سال 2023 میں اس طیارے کو نیوکلر سرٹی فیکیٹ جاری کیے جانے کا امکان ہے۔ 5تھ جنریشن کے حامل اس طیارے پر نیوکلیئر بم کی صلاحیت بڑھانے کا آغاز گزشتہ سال 2019 میں کیا گیا تھا۔ ایف 35 کی بم گرانے کی حالیہ نئی تصاویر ایف 35 جوائنٹ پروگرام آفس کی جانب سے جاری کی گئی ہیں، جو اس طیارے کی معاونت میں اس کی صلاحتیوں کو جانچ کرتا ہے۔ ادارے کی جانب سے بم گرانے کی تاریخوں کی تفصیلات بھی جاری کی گئی ہیں۔